آل پاکستان انجمن تاجران کاسیلزٹیکس جبری رجسٹریشن کے خلاف26اکتوبرکو فیض آباد پر دھرنےکا اعلان

اسلام آباد(نیوزٹویو)آل پاکستان انجمن تاجران نے 26اکتوبر کو ٹیکسوں کی بھرمار، سیلزٹیکس جبری رجسٹریشن، پیٹرول بم کے خلاف فیض آباد پر دھرنےدینے کا اعلان کیا ہے جبکہ اس سے قبل 22اکتوبرکواسلام آباد کے تاجروں اور صنعت کاروں کا ٹیکس کنونشن منعقد ہوگا آل پاکستان انجمن تاجران اور ٹریڈرز ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے صدر اجمل بلوچ، سیکرٹری خالد چوہدری، جناح سپر کے صدر اسد عزیز، سپر مارکیٹ کے صدر شہزاد عباسی، بلیوایریا ایسٹ کے صدر راجہ عماد بن عارف، راجہ جاوید اقبال، احمد خان، طاہر عباسی، عابد عباسی، چوہدری ظفر اقبال، آفتاب گجر، سید الطاف حسین شاہ، زاہد بٹ، چوہدری عبدالغفار، راجہ خرم نیاز، محبوب خان، چوہدری ریاست اور عرفان چودھری نے کہا ہے کے اسلام آباد بھر کے تاجر ٹیکسوں کی بھرمار، سیلزٹیکس جبری رجسٹریشن، پیٹرول بم اور دیگر مسائل کے خلاف 26 اکتوبر کو فیض آباد چوک میں دھرنا دیں گے جس میں پاکستان بھر کے تاجر نمائندے اور جڑواں شہروں کے تاجر بھرپور شرکت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی او ایس کی تنصیب کا فیصلہ دراصل کاروبار پر قبضہ کرنے کے مترادف ہے اور تمام تجارتی راز محفوظ نہیں رہیں گے۔ جن اداروں میں بھی پی او ایس لگ چکے ہیں ان کی سیلز میں 30 فیصد کمی ہو چکی ہے بڑی خریداری کرنے والے اپنی شناخت چھپانے کے لئے خریداری نہیں کرتے جبکہ یہ تجربہ اسلام آباد اور کراچی میں ہی کیا جا رہا ہے۔ تاجروں نے کریڈٹ کارڈ مشینیں اٹھانی شروع کر دی ہیں۔ گزشتہ روز حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمت میں ظالمانہ اضافہ کرکے تاجروں کی کمر توڑ دی ہے۔ ملک میں جاری مہنگائی کے طوفان میں مزید اضافہ ہوگا۔ چپکے سے گیس کی قیمت میں بھی اضافہ کر دیا گیا، آٹا مہنگا ہوگیا، غریب آدمی روٹی کو ترس گیا ہے۔ ٹیکسوں کی بھرمار اور پیٹرول بم کے اثرات پر اسلام آباد کے تاجروں اور صنعت کاروں کا ٹیکس کنونشن 22 اکتوبر کو منعقد ہوگا۔ انہوں نے 26 اکتوبر کے دھرنے میں تاجروں کو بھرپور شرکت کی دعوت دی اور کہا کہ دھرنا پرامن ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں