اسلام آبادہا ئیکورٹ کا سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی آڈیو ٹیپ پر کمیشن بنانے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد(نیوزٹویو) اسلام آباد ہائیکورٹ نےسابق چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار کی مبینہ آڈیوٹیپ کی تحقیقات کیلئےکمیشن بنانےکی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔جمعہ کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں سوا دو گھنٹےسماعت جاری رہی درخواست گزارکے وکیل صلاح الدین ایڈوکیٹ نےعدالت کو بتایا کہ اصل آڈیو تو پتہ نہیں خبر لانے والے صحافی کے پاس بھی ہے یا نہیں۔پاکستان بار کونسل کے نمائندے حسن پاشا نے بھی عدالت کو بتایا کہ آڈیو تو ہمارے پاس بھی نہیں ہےلیکن ہم اِس آڈیو پررنجیدہ ہیں۔اصل آڈیو عدالت کے سامنے موجود نہ ہونے پرچیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ محض انٹرنیٹ سے لئے گئے کلپ پرتو دنیا کی کوئی بھی فرانزک فرم مستند رائے نہیں دے سکتی صلاح الدین ایڈوکیٹ نے کہا کہ ثاقب نثار نے تردید کی تھی کہ آواز اُن کی نہیں ہے،پھر ایک نجی ٹی وی چینل نے دکھایا کہ آواز اُنہی کی ہے مگر آڈیو کلپ اُن کی مختلف تقریروں سےجملےجوڑ کر بنایا گیا۔ اٹارنی جنرل نےکہا کہ چینل نےیہ بھی دکھایا کہ کہاں کہاں سے آوازیں اٹھا کر ملائی گئیں۔ کچھ لوگ کہتے ہیں کہ آڈیو درست ہے اور کچھ کہتے ہیں کہ ٹکڑے جوڑ کر بنائی گئی،یہ عدالت کسی ایک پلڑے میں اپنا وزن نہیں ڈال سکتی ہے، عدلیہ کو کسی فرانزک کی بیساکھیوں کی ضرورت نہیں،تاریخ اپنا فیصلہ خود دے گی،ماضی میں بھٹو کی پھانسی،جسٹس سجاد علی شاہ کو ہٹانے اور ججوں کوبریف کیس بھیجنے کی کون سی انکوائری ہوئی تھی؟ درخواست گزار اور پاکستان بار کونسل کے نمائندے نے معاملے پر کمیشن بنانے کی استدعا پر دلائل ختم کئے تو اٹارنی جنرل نے معاملہ زیر التوا اپیل سے متعلق ہونے کے باعث درخواست مسترد کرنے کی استدعا کی۔عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں