ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں کروں گا، مجھے ضلع بدر نہ کیا جائے، علی امین گنڈا پور

اسلام آباد(نیوزٹویو) الیکشن کمیشن نے وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور کے خلاف ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا۔الیکشن کمیشن میں چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور کے خلاف ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے کیس کی سماعت ہوئی۔علی امین کے وکیل نے کہا کہ انکوائری باضابطہ نہیں کی گئی، تحقیقات نہیں ہے اور شکایت بھی موجود نہیں ہے۔ اس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ آپ یہ کہنا چاہتے ہیں کہ آپ کے کلائنٹ نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں کی ؟علی امین کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ سیاسی کارکن خوشی غمی میں جاتے ہیں ، لوگوں سے ملاقات ہوتی ہے ، لوگ اپنے کام کہتے ہیں۔ اس پر چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ سیاسی کارکن سے وفاقی وزیر بننے تک آپ کی ذمہ داری بڑھتی ہے، ضابطہ اخلاق تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت سے بنتا ہے، صرف الیکشن کمیشن نے نہیں بنایا ۔علی امین کے وکیل نے کہا کہ الیکشن کمیشن کارروائی ختم کرے،  یقین دہانی کراتا ہوں ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں ہوگی۔علی امین گنڈا پور نے کہا کہ لکھ کر دیتا ہوں کہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں کروں گا۔ مجھے ضلع بدر نہ کیا جائے۔بعد ازاں الیکشن کمیشن نے علی امین گنڈا پور ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا جو آج ہی سنایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں