پاکستانی کرکٹ ٹیم کے لیے اسپورٹس سائیکولوجسٹ اپائنٹ کرنے کا فیصلہ

پی سی بی کی کوشش تھی کہ پی ایس ایل پاکستان میں ہو لیکن کرونا وائرس کے باعث ممکن نہ ہوسکا۔ کھلاڑی مسلسل 14 دن بائیو سکیور ببل میں رہتے ہیں اس لیے اسپورٹس سائیکولوجسٹ اپائنٹ کررہے ہیں جو کھلاڑیوں کی مدد کرسکیں۔ وسیم خان نے کہا کہ کرونا ایس او پیز کے باعث پی ایس ایل میچز کے دوران فینز کو گراؤنڈ میں آنے کی اجازت نہیں ہے، ہمیں یقین ہے کہ پی ایس ایل سکس صحیح انداز میں مکمل ہوجائے گا۔ چیف ایگزیکٹیو پی سی بی نے کہا کہ دورہ انگلینڈ کے دوران پاکستان کرکٹ ٹیم کو مشکلات درپیش نہیں ہونگی، انگلینڈ میں محدود کرکٹ شائقین کو گراؤنڈ میں آنے کی اجازت دی جارہی ہے جس سے ٹیم کا مورال بلند ہوگا۔ انگلش کرکٹ بورڈ سے بات کی ہے قومی ٹیم قرنطینہ کے دوران پریکٹس کرسکے گی۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کرکٹ ٹیم کی کارکردگی کو بہتر بنانے کےلیے انکی تنخواہوں اضافہ کررہے ہیں، مینز اور ویمنز کرکٹ ٹیم کی تنخواہوں میں واضح فرق ہے لیکن کوشش کرہے ہیں کہ اس فرق کو کم سے کم کیا جائے۔ وسیم خان نے گوادر کرکٹ اسٹیڈیم کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پی سی بی کی کوشش ہے کہ گراؤنڈ میں بہتر سہولیات مہیا کرسکیں تاکہ مستقبل میں میچزکرائے جاسکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں