کراچی میں انٹر بورڈ کے باہر دھرنا

کراچی(نیوزٹویو)کراچی میں اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کے باہر فرسٹ ایئر کے بدترین نتائج کے خلاف جماعت اسلامی کا دھرنا جاری ہے۔
دھرنے میں طلباء اور والدین کی بڑی تعداد شریک ہے جبکہ امیرِ جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمٰن نے بھی دھرنے میں شرکت کی ہے۔
فرسٹ ایئر کے حالیہ نتائج میں 44 ہزار سے زائد طلباء فیل ہوئے ہیں اور فرسٹ ایئر کے تمام گروپوں کے نتائج میں فیل ہونے والے طلباء کا تناسب 64 فیصد ہے۔
اس سے قبل اس معاملے پر گورنر سندھ کامران ٹیسوری نے انٹربورڈ کراچی میں نتائج سے متاثرہ طلباء کی دادرسی کرتے ہوئے کہا تھا کہ کراچی کے 66 فیصد بچوں کو فیل کر دیا گیا ہے جو سندھ کی تعلیم پر سوالیہ نشان ہے
انہوں نے کہا تھا کہ انٹر کے نتائج پر ماں باپ پریشان ہیں اور سیاسی لوگ بھی احتجاج میں شریک ہورہے ہیں، لہٰذا ہم چاہتے ہیں کہ حقائق کا پتہ چلے۔
دوسری جانب نگراں وزیراعلیٰ سندھ جسٹس (ر) مقبول باقر نے معاملے کو غیر اہم قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ طلباء فیل ہوگئے ہیں تو ہوگئے ہوں، لیکن فیل ہونے پر احتجاج کس بات کا؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں