سپریم کورٹ نےمحکمہ تعلیم سندھ ملازمین تنخواہیں بندش کیس میں ملازمین کی تفصیلا ت طلب کر لیں

اسلا م آباد (نمائندہ نیوزٹویو) سپریم کورٹ نےمحکمہ تعلیم سندھ ملازمین تنخواہ بندش کیس میں ملازمین سےمتعلق تفصیلا ت طلب کر لیں جبکہ ایڈووکیٹ جنرل سندھ آفس کی جانب سے لاء آفیسر کے پیش نہ ہونے پرسخت نا راضگی کا اظہار کیا عدالت نے کہا کہ ایڈووکیٹ جنرل سندھ آفس سے کوئی آیا نہ عدم دستیابی کی وضاحت بھیجی گئی ملازمین کی تنخواہوں کی بندش کا کیس کئی سالوں سے زیر التواء ہے سپریم کورٹ نے ملازمین کے وکلاء سے تحریری جواب و گزارشات طلب کر لیں جسٹس مقبول باقر نےاستفسار کیا کہ کیا ملازمین کی تنخواہیں بند ہیں بتایا جائے ملازمین نے کب محکمہ جوائین کیا،کتنے دن کام کیا ملازمین کے وکیل نے عدالت کے استفسار پر بتایا کہ کسی قانون کے تحت کسی ملازم کی تنخواہ بند نہیں کی جا سکتی بھرتیاں درست ہے یا غلط وہ الگ نقطہ ہےقانونی سوال ملازمین کی تنخواہوں کی بندش کا ہےکیا قانون کسی ملازم کی تنخواہ کو روکنے کی اجازت دیتا ہےجسٹس مقبول باقر کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی محکمہ تعلیم نے مبینہ غیر قانونی بھرتیوں پر ہزاروں ملازمین کی تنخواہیں 2012 سے روک رکھی ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں