اسلام آباد ہا ئیکورٹ کا گرین بیلٹ پر سی ڈی اے کا غیر قانونی پلا ٹ الا ٹمنٹ پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد(نمائندہ نیوزٹویو)اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس محسن اخترکیانی کی عدالت نے گرین بیلٹ پر سی ڈی اے کا غیر قانونی پلاٹ الاٹمنٹ کے خلاف درخواست میں فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔گذشتہ روز سماعت کے دوران درخواست گزار کے جانب سے بیرسٹر عمر اعجاز گیلانی اور پیر خضر حیات جبکہ سی ڈی اے کی جانب سے وکیل نذیر جواد عدالت پیش ہوئے،اس موقع پر اسلام آباد کے جی الیون سیکٹر  میں گرین بیلٹ پر پلاٹ الاٹمنٹ بارے سی ڈی اے کا جواب جمع کراتے ہوئے سی ڈی اے وکیل نے کہاکہ سی ڈی اے نے گرین بیلٹ پر پلاٹ الاٹمنٹ کا نوٹیفکیشن جاری کرکے ویب سائٹ پر اپلوڈ کیا،درخواست گزار وکیل عمر گیلانی نے کہاکہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے رہائشی سیکٹر میں گرین بیلٹ کو رہائشی یا کمرشل جگہ میں منتقلی سے منع کیا ہے،سی ڈی اے کا موجودہ فیصلہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کی منافی ہے،سی ڈی اے ریگولیشن کے مطابق ڈیولپ سیکٹرز میں تبدیلی یا ترمیم کے لیے وہاں کے رہائشیوں سے اجازت لینی ہوگی،گرین بیلٹ پر پلاٹ الاٹمنٹ کے لیے سی ڈی اے نے ایک نوٹیفکیشن چڑھادیا،سی ڈی اے نہ ہی کوئی اخباری اشتہار دیا، نہ ہی کوئی گزٹ نوٹیفکیشن کی، اور نہ ہی وہاں کے رہائشیوں سے مشورہ کیا،گرین بیلٹ کے لے آؤٹ پلان میں ترمیم کرنا نہ صرف آئین اور قانون کی خلاف ورزی ہے بلکہ سی ڈی اے کی اپنی ضابطہ خلاف ورزی ہے،سی ڈی اے بورڈ نے ڈائریکٹر پلاننگ کو اخباری اشتہار کے احکامات جاری کیے تھے،گرین بیلٹ پر پلاٹ الاٹمنٹ کے اس اس فیصلے پر سہ ڈی اے بورڈ کے احکامات کی بھی خلاف ورزی کی گئی،عدالت نے فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں