ایل این جی کیس، کیمرے لگا کر عوام کوبراہ راست کارراو ئی دکھا ئی جائے،شاہد خاقان عباسی کاچیئرمین نیب سے مطالبہ

اسلام آباد(نمائندہ نیوز ٹو یو)سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ کئی سال اور سینکڑوں پیشیاں ہو گئیں،کیمرے لگا کر عوام کو بتایا جانا چاہیے کہ کونسی کرپشن ہوئی ہے،چیئرمین نیب میں ہمت ہے تو کیمرے لگائیں احتساب عدالت پیشی کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نیب وہ ادارہ ہے جس نے ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے،اس حکومت کے سینکڑوں ارب روپے کے کرپشن کیسز نیب کو نظر نہیں آتے،عوام کی جیبوں سے نکالے گئے چھ سو ارب روپے کی تفتیش ایک سینیئر کر رہا ہے،آزاد کشمیر کے الیکشن میں دھاندلی کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے،این سی او سی نے چیف الیکشن کمشنر کو لکھا کہ الیکشن دو ماہ کیلئے ملتوی کر دیں،یہ دھاندلی کیلئے ملی بھگت ہے جو گلگت میں کیا گیا وہی آزاد کشمیر میں کرنے کی کوشش ہے،پوری مشینری لگی رہی لیکن ن لیگ کا ایک بندہ نہیں توڑ سکے،ایک ایم ایل اے کو توڑا گیا اور اس کے گلے میں پی ٹی آئی کا پٹہ ڈالا گیا،کیا این سی او سی کا الیکشن ملتوی کرنے کا کہنا آئینی ہے،عوام کی رائے کو توڑنے اور الیکشن چوری کرنے کی پوری کوشش ہے،پاکستان کا الیکشن چوری ہوا اس کے اثرات اب دیکھ رہے ہیں، کشمیر کا الیکشن چوری ہو گا تو ہمارے موقف کی کیا اہمیت رہ جائے گی،پاکستان مسلم لیگ ن کی سیاست اصولوں اور نظریہ کی سیاست ہے،اکیسویں صدی ہے اور آج بھی ہم گھروں میں گھس کر مارتے ہیں،دباو ڈالتے ہیں حق اور سچ کی بات نہیں کر سکتے، یورپی یونین نے کہا کہ پاکستان میں صحافی محفوظ نہیں ہیں،دنیا میں انسانی حقوق کے ادارے کہہ رہئے ہیں کہ صحافیوں کو نوکریوں سے نکالا جا رہا ہے،شہباز شریف پارٹی کے صدر ہیں، ووٹ کو عزت دو ان کا شروع دن سے نعرہ ہے،شہباز شریف کا وہی بیانیہ ہے کہ ووٹ کو عزت دو اور ملک کو آئین کے مطابق چلایا جائے،مسلم لیگ ن کے اندر تقسیم کی باتیں بے بنیاد ہیں،پی ڈی ایم میں پیپلز پارٹی کی واپسی کی کوششیں صفرہیں،پی پی پی اور اے این پی پی ڈی ایم کا حصہ نہیں ہیں، انہوں نے کہاکہ اسے مزاحمت سمجھیں یا مفاہمت، ن لیگ کی سیاست آئین اور اصول کی ہے، اکسیویں صدی میں حق کی آواز دبانے کیلئے لوگوں کے گھر میں گھس کر مارتے ہیں،یورپی یونین نے کہا تھا آپ کے ملک میں صحافی آزاد نہیں،لوگوں کو دھمکایا جاتا ہے نوکریوں سے نکلوایا جاتا ہے،یہ بات میں نے یورپی یونین اور عالمی ادارے کر رہے ہیں،پیپلز پارٹی کو واپس پی ڈی ایم میں لانے کی آپ کی کوشش سے متعلق سوال پر شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ ہماری صفر کوشش ہے،جس نے اعتماد توڑا وہ اعتماد بحال کرے ورنہ راہیں جدا ہیں،پیپلز پارٹی اور اے این پی اس وقت پی ڈی ایم کا حصہ نہیں ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں