حکومت ریٹیلرزکوپوائنٹ آف سیلز سسٹم پر جوڑنےکے فیصلے پر ڈٹ گئی,ایف بی آر میں اجلاس

اسلام آباد (نمائندہ نیوز ٹو یو)وفاقی وزیر برائے خزانہ و ریونیو شوکت فیاض احمد ترین نے ایف بی آر ہیڈ کوارٹر کا دورہ کیا اور ایف بی آر کے افسران سے ملاقات کی۔ ملاقات کا ایجنڈا ایف بی آر کے پوائینٹ آف سیلز نظام سے ریٹیلرز کی جلد از جلد منسلک ہونے کی حکمتی عملی کو وضع کرنا اور ٹیکس نیٹ میں اضافہ کی کوششوں اور ثمرات کا جائیز ہ لینا تھا۔ میٹنگ میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے خزانہ و ریونیو ڈاکٹر وقار مسعود خان اور چئیرمین ایف بی آر عاصم احمد و دیگر ممبران ایف بی آر بھی  موجود تھے۔چئیرمین ایف بی آر نے کہا کہ آئی ٹی کمپنیوں کی پوائینٹ آف سیلز سسٹم کی تنصیب و کنفیگریشن سے متعلقہ لائیسینسینگ کو اگست کے اختتام تک مکمل کر لیا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام آر ٹی اوز میں چیف کمشنرز کی سربراہی میں مانیٹرنگ سیل تشکیل دیئے جائیں گے تا کہ و ہ جلد از جلد پی او ایس سے منسلک ہونے کی رفتار اور درکار نتائج کی براہ راست نگرانی کر سکیں۔  وزیر خزانہ و ریونیو نے ہدایات جاری کیں کہ پی او ایس سے منسلک مشینوں کی ٹریکنگ پراگریس کی موثر نگرانی کی جائے اور ریٹیلرز کو مشینوں کی تنصیب کے بعد ہر ممکن راہ نمائی فراہم کی جائے۔ انہوں نے مزید ہدایات جاری کیں کہ تمام ریٹیلرز کے فروخت کے حجم کا تعین کیا جائے تاکہ پی او ایس سسٹم سے حاصل ہونے والے درکار ریونیو کو حاصل کیا جا سکے۔ انہوں نے ہدایا ت جاری کیں کہ ایف بی آر ہیڈ کوارٹر میں پی او ایس سسٹم سے متعلقہ معاملات کو تیز کرنے کے لئے ایک سیل تشکیل دیا جائے۔

وزیر خزانہ و ریونیو کی سربراہی میں ہونے والی اس میٹنگ میں ٹیکس نیٹ کو بڑھانے کی حکمت عملی پر بھی غور کیا گیا۔ ایف بی آر ٹیم نے بریفنگ دی کہ بڑی تعداد میں ممکنہ ٹیکس گزاروں کی نشاندہی کی جا چکی ہے جو کہ تھرڈ پارٹی سے حاصل کردہ ودہولڈنگ معلومات کی بناء پر کی گئی ہیں۔ یہ افراد ابھی تک ٹیکس نیٹ میں شامل نہیں ہیں۔ چئیرمین ایف بی آر نے کہا کہ ہر ممکن کوششیں کی جارہی ہیں کہ نشاندہی ہونے والے تمام ممکنہ ٹیکس گزاروں کو جلد از جلد ٹیکس نیٹ میں شامل کیا جائے ۔ وزیر خزانہ و ریونیو نے ہدایات جاری کیں کہ ایسے تمام افراد کو ٹیکس نیٹ میں شامل کرنے میں حائل درپیش مشکلات کو جلد از جلد دور کیا جائے  اور تھرڈ پارٹی باوثوق معلومات کی بناء پر مزید افراد کو ٹیکس نیٹ میں لایا جائے۔ وزیر خزانہ و ریونیو نے کہا کہ تھرڈ پارٹی آڈٹ  کرانے سے متعلق سٹریٹجی کو جلد از جلد حتمی شکل دے دی جائے جس پر عمل درآمد سے نہ صرف ٹیکس نیٹ میں اضافہ ہو گا بلکہ ریونیو بھی بڑھے گا۔ میٹنگ کے اختتام پر فیصلہ کیا گیا کہ دونوں ایجنڈا آئیٹمز پر عمل درآمد کی رفتار کو جانچنے کے لئے مزید میٹینگز جاری رہیں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں