سی ٹی ڈی کی حراست میں نوجوان کی ہلاکت پراہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج تحقیقا ت شروع

اسلام آباد(نمائندہ نیوز ٹویو) وفاقی دا رلحکومت میں سی ٹی ڈی کی حراست میں دیر کے نوجوان کی ہلاکت کے معاملے کے حوالےسےوزیراعلیٰ خیبر پختونخواکے مداخلت پرمتعلقہ ا ہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہےتفصیلات کے مطابق ضلع دیر کےنوجوان کا سی ٹی ڈی اسلام آباد کی حراست میں موت کے معاملے کا وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے نوٹس لے لیا ہے انہوں نے اتوار کو آئی جی اسلام آباد سے رابطہ کیا جس پر متعلقہ اہلکاروں کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے تحقیقات کا آغازکر دیا گیا ہے نوجوان حسن کا تعلق خیبر پختونخوا کے ضلع دیر سے تھا۔گزشتہ دنوں نوجوان حسن کو سی ٹی ڈی نے اسلام آباد نے گرفتار کیا تھا۔وزیر اعلی خیبر پختونخوا نے حسن کے اہل خانہ کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرا ئی ہےاور کہا ہے کہ شفاف تحقیقات کو یقینی بنایا جائے گا اور متاثر خاندان کو انصاف فراہم کیا جائے گا کوئی بھی ماورائے عدالت اور خلاف قانون عمل برداشت نہیں کیا جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں