قطر پاکستان کو 10 لاکھ کورونا ویکسین کی خوراکیں فراہم کرے گا،قطری سفیر

اسلام آباد(نمائندہ نیوز ٹویو) پاکستان میں تعینات قطر کے سفیر شیخ سعود بن عبدالرحمن بن فیصل الثانی نے کہا ہےکہ قطر پاکستان کو کورونا ویکیسن کی دس 10لا کھ خوارکیں فراہم کریگااسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے پاکستان میں تعینات قطر کے سفیر شیخ سعود بن عبد الرحمن بن فیصل الثانی نے پارلیمنٹ ہاؤس میں ملاقات کی۔ ملاقات میں قطر اور پاکستان کے مابین دوطرفہ تعلقات سمیت باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ قطر اور پاکستان کے مابین پہلے سے خوشگوار دوستانہ تعلقات موجود ہیں جو مذہب، تاریخ اور ثقافتی اقدار کی مضبوط بنیادوں پر استوار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمانی سطح پر معیشت، تجارت، سرمایہ کاری، صحت اور تعلیم کے شعبوں میں باہمی تعاون کو فروغ دیے کر ملک میں معاشی سرگرمیوں میں مزید اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

 اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین  بالخصوص توانائی کے شعبے میں تعاون کو مزید بڑھانا ملک  میں ترقی اور خوشحالی کی لیے ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان توانائی، صنعتی اور دیگر اقتصادی شعبے میں قطری سرمایہ کاری کا خیرمقدم کرتا ہے۔  انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین باہمی تجارت کو بڑھانے کے وسیع مواقع موجود ہیں۔  انہوں نے مزید کہا کہ دونوں ممالک کے مابین پارلیمانی روابط کا فروغ دونوں ممالک کو مزید قریب لانے میں اہم کردار ادا کرے گا جس سے دونوں ممالک کے اراکین پارلیمنٹ کو ایک دوسرے کے تجربات استفادہ حاصل کرنے کا موقع ملے گا۔  انہوں نے بتایا کہ قطر میں مقیم پاکستانی تارکین وطن قطر کی معاشی ترقی میں اضافے کے لیے اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ قطر میں مقیم پاکستانی اپنا قیمتی زرمبادلہ کما کر ملک میں بھیجوا رہے ہیں جو ملک کے  سماجی و معاشی استحکام میں معاون ثابت ہو رہا ہے۔

 پاکستان میں تعینات قطر کے سفیر شیخ سعود بن عبدالرحمن بن فیصل الثانی نے کہا کہ قطر، پاکستان کو اپنا بھائی اور تجارتی شراکت دار سمجھتا ہے۔  انہوں نے کہا قطر تجارت، تعلیم اور صحت کے شعبے میں پاکستان کی تعاون جاری رکھے گا۔ انہوں نے COVID-19 وبائی امراض سے کامیابی سے نمٹنے کے لئے پاکستانی حکومت کی حکمت عملی کی تعریف کی۔ انہوں نے بتایا کہ قطر پاکستان کو 10 لاکھ کوویڈ 19 ویکسین کی خوراکیں فراہم کرے گا۔  انہوں نے دنیا بھر میں اسلامو فوبیا کے مسئلے کو اٹھانے کے لئے پاکستان کی کوششوں کو بھی سراہا اور مسلم اُمہ ممالک کے مابین اتحاد، اتفاق اور یکجہتی کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں