ملالہ مجھ جیسے لاکھوں نوجوانوں کیلئے مثالی کردار ہیں: ولید خان

پشاور کے آرمی پبلک سکول میں ہونے والے حملے میں بچ جانے والا طالب علم ولید خان کا کہنا ہے کہ انکا اور ملالہ کا موازنہ نہ کیا جاۓ۔ انکا اور ملالہ کا کوئی مقابلہ نہیں۔ میں نے ان سے بہت کچھ سیکھا ہے اور وہ میرے جیسے بہت سے لوگوں کے لیے انسپیریشن ہیں۔ حال ہی میں برطانوی میگزین ووگ کو دیے جانے والے انٹرویو میں ملالہ کے شادی سے متعلق خیالات پرانہیں خاصی تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔ اسی حوالے سے سماجی رابطوں کی سائٹ ٹوئٹرپرولید خان نے لکھا ”کافی عرصےسے میں اپنی اورملالہ کی تصاویر زیرگردش دیکھ رہا ہوں ، میری درخواست ہے کہ یہ موازنہ بند کیا جائے۔ ہم کسی ایک کو نیچا دکھا کردوسرے کو اوپرنہیں لاسکتے۔  ”۔ ولید خان نے واضح کیا کہ اس تمام سفرمیں ملالہ کی فیملی میری اپنی فیملی کی طرح رہی اور ہمیں پاکستان کیلئے نام کمانے والے تمام افراد کا موازنہ کرنے کے بجائے ان سب پرفخرکرنا چاہیے۔ ولید نے بتایا کہ وہ اپنےعلاج کیلئے برمنگھم میں مقیم ہیں جہاں ان کا تعلیمی سلسلہ بھی جاری ہے ۔ خود کو ملنے والے پیار کیلئے شکرگزاری ظاہر کرتے ہوئے انہوں نے لکھا ” میری عاجزانہ درخواست ہے کہ یہ موازنہ بند کردیا جائے ”۔ سولہ دسمبر سال 2016 کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر دہشتگردوں کے حملے میں 12 سالہ ولید کے چہرے پر6 گولیاں لگیں تھیں لیکن وہ معجزانہ طور پربچ گئے۔ بعد ازاں ولید کو علاج کیلئے لندن لےجایا گیا تھا جہاں ان کی متعدد سرجریز ہوچکی ہیں۔ اس حملے میں 150 سے زائد افراد شہید ہوئے جن میں 132 بچے بھی شامل تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں