منی لانڈرنگ اورآمدن سےزائد اثاثہ جات کیس میں خواجہ آصف کی ضمانت منظور،رہا ئی کا حکم

لاہور(نیوزٹویو) لا ہورہائیکورٹ نے منی لانڈرنگ اورآمدن سے زائد اثاثہ جات کیسز میں مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف کی ضمانت منظور کرکے ان کی رہا ئی کا حکم دے دیا ہےخواجہ آصف نےآمدن سےزیادہ اثاثے بنانے کے نیب کیس میں ضمانت پر رہائی کیلئے عدالت سے رجوع کیا تھا۔انہیں دسمبر2020 میں گرفتار کیا گیا تھا۔ نیب نے عدالت کو بتایا کہ خواجہ آصف کو متعدد مواقع دیے گیے لیکن وہ مطمن نہیں کر سکے ہیں نیب کے مطابق خواجہ آصف کے پاس 2004 سے 2008 تک غیر ملکی اقامہ رہا انہوں نے بطور کنسلٹنٹ لیگل ایڈوائزر کے 13 کروڑ 60 لاکھ روپے وصول کیے۔خواجہ آصف کووصول کی گئی تنخواہ سمیت دیگر تفصیلات جمع کروانے کی ہدایت کی گئی تھی،انہیں کمپنی کو دی گئی نوکری کی درخواست جمع کروانے کا کہا گیا تھا- نیب کی جانب سے خواجہ آصف کو اقامہ ایگریمنٹ بھی نیب کو جمع کروانے کا کہا گیا تاہم وہ دوران تفتیش مسلسل عدم تعاون کرتے رہے ہیں نیب کا الزام ہے کہ بینک کے چپڑاسی نے خواجہ آصف کے اکاؤنٹ میں اٹھائیس ملین سے زائد رقم جمع کرائی۔ مبینہ طور پر رہنما کے بھتیجے نے بھی20 ملین جمع کرائے اور خواجہ آصف کو2 ملازمین نے35 ملین روپے کی ٹرانزیکشنز کیں۔یب وکیل نے عدالت کو بتایاکہ اس کیس میں 2016ء تک کے اثاثوں کی تفصیلات عدالت کے سامنے رکھی ہیں، اس میں تمام جائیدادیں جو بیچی اور خریدی گئیں، ان کی تفصیلات شامل کی ہیں۔ خواجہ آصف نے متحدہ عرب امارات میں نوکری کی تنخواہ اور بزنس کی تفصیل نہیں بتائی۔ ملزم نے ابھی تک یہ نہیں بتایا گیا کہ نوکری اور بزنس سے کتنے پیسے کمائے۔

عدالت نے نیب پراسیکیوٹر سے کہا کہ آپ نے دو رپورٹس پیش کیں جن میں فرق ہے۔ پہلی رپورٹ میں نیگیٹو رقم 23 کروڑ اور دوسری رپورٹ میں کم ہو کر 15 کروڑ رہ گٸی۔ نیب جو کہہ رہا ہے وہ بادی النظر میں ثابت نہیں ہو رہا۔جج نے ریمارکس دیئے کہ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ نیب افسران دفاتر میں بیٹھے رہیں گے اور لوگ سارے شواید خود آ کر سامنے رکھ دیں گے۔ نیب کے تفتیشی نے کیوں جا کر تنخواہوں کا ریکارڈ اکٹھا نہیں کیا؟ تنخواہ کا معاملہ ایف آئی اے کے پاس بھی آیا، وہی نیب پوچھ رہا ہےنیب کےوکیل نے کہا کہ ایف آئی اے نے خواجہ آصف کے خلاف صرف اقامہ کی تحقیقات کیں۔ اس کے پاس صرف اقامہ کی تنخواہ کا معاملہ آیا تھا۔ نیب نے خواجہ آصف سے آمدن سے زائد اثاثوں کی بابت تحقیقات کیں۔ عدالت نے وکلا کی حتمی بحث کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے خواجہ آصف کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیدیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں