ن لیگ کے فیصلوں سے معشیت کو 20ارب ڈالر کا نقصان ہوا،وزیرخزانہ شوکت ترین

اسلام آباد (نمائندہ نیوز ٹو یو) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ ن لیگ کے فیصلوں سے معشیت کو 20ارب ڈالر کا نقصان ہوا سابق دور میں قرضے لے کر معیشت بہتر دکھائی گئی۔ اسحاق ڈار جو کچھ کر گئے اسے موجودہ حکومت نے بھگتا۔ اسحاق ڈار کی معاشی غلطیاں وزیراعظم عمران خان کو بھگتنا پڑیں۔ ایف بی آر اہلکار کسی کو بھی ہراساں نہیں کرسکیں گے مزید ٹیکس ہرگز نہیں لگا ئیں گے ہرسال ٹیکس ریونیو میں 20 فیصد اضافہ کرنا ہمارا ہدف ہے اسلام آباد میں ورچوئل پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خزانہ نے کہا کہ سابق حکومت تباہی کے دہانے معیشت چھوڑ کر گئی۔ ن لیگ کے فیصلوں سے معیشت کو 20 ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔ سابق حکومت نے پاور منصوبوں میں پلاننگ نہیں کی تھی ہم کیپسٹی پیمنٹ دے دے کر تھک گئے ہیں۔ مسلم لیگ (ن) نے الزام عائد کیا کہ حکومت کی نااہلی کے باعث گروتھ کم ہوئی، حالانکہ ان کے دور میں گروتھ میں اضافہ قرض لینے سے ہوا جبکہ روپے کی قدر کو مصنوعی طریقہ سے روکنے سے تاریخی کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ہوا وزیر خزانہ نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے دور میں 20 ارب ڈالر کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ تھا۔ اسحاق ڈار نے معیشت کے ساتھ جو کیا، وہ سب نے دیکھا۔ عمران خان کی حکومت نے گزشتہ حکومت کا خسارہ سنبھالا مسلم لیگ ن کے دورمیں کورونا نہیں تھا۔ روپےکی قدرمصنوعی طریقے سے روکنے کی وجہ سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ہوا انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث بھی ملکی معیشت کو دھچکا لگا لیکن اس کے باوجود موجودہ حکومت اقتصادی شرح نمو 4 فیصد تک لے آئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں