وزیراعظم کاسٹیزن پورٹل پردرج ہراسگی کی شکایت میں غفلت برتنے پرایف آئی اے ا فسران کےخلاف کارروائی کاحکم

اسلام آباد(نمائندہ نیوز ٹویو)وزیرا عظم نےسٹیزن پورٹل پر درج خاتون کو ہراساں کرنے کے کیس میں غفلت برتنے پر ایف آئی اے کے افسران کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا ہے تفصلا ت کے مطابق وزیرا عظم نےسٹیزن پورٹل پر درج خاتون ہراسگی کیس کی شکا یت کے حل میں غفلت برتنے کا سختی سے  نوٹس لیا ہے اوراس پر نا راضگی کا اظہارکرتے ہو ئے ڈی جی ایف آئی اے کو ہدا یت کی ہے کہ کیس کی شفاف انکوائری کی جا ئے اور صاف اور شفاف انکوائری کے حوالےسے ایف آئی اے کے  متعلقہ افسران کو فوری طور پر معطل کر دیا جا ئے تا کہ وہ کیس پر ا ثر انداز نہ ہو سکیں وزیراعظم آفس نے ڈی جی ایف آئی اے سے ایک مرا سلے میں کہا ہے کہ خاتون نے پاکستان سٹیزن پورٹل پر 5 مرتبہ شکایات درج کی لیکن ایف آئی اے کے افسران نے کارروائی نہ کی متعلقہ افسران کے خلاف انکوائری کرکے سخت ایکشن لیا جا ئے خاتون نے ہراسگی کے باعث یونیورسٹی سے نوکری چھوڑ کر ایف آئی اے سے رجوع کیا اور بعد ازاں ایف آئی اے افسران کے عدم تعاون کی وجہ سے خاتون نے مبینہ طور پرخودکشی کی کوشش کی دسمبر 2019 سے 13 جون 2021 تک ایف آئی اے نے شکایت کو مسلسل نظرانداز کیا دو بار شکایت ری اوپن کے باوجود ایف آئی اے نے اپنی ذمہ داری  کی ادائیگی میں کوتاہی برتی جس پر خاتون اپنے شوہر کے ہمراہ ایف آئی اے کے خلاف شکایت لے کر وزیراعظم آفس پہنچ گئی خاتون کی درخواست پر وزیراعظم آفس نے ذمہ داران اور متعلقہ ا فسران کے خلاف سخت ایکشن کی یقین دھانی کرا ئی وزیراعظم ڈلیوری یونٹ نے ڈی جی ایف آئی اے کو مراسلہ جاری کیا ہے کہ معاملے کی اعلی سطح تحقیقات کروا کر متعلقہ افسران کے خلاف ضابطے کے مطابق کاروائی کی جائے خاتون کو جلد از جلد ریلیف فراہم کیا جائے وزیر اعظم نے کہا ہے کہ کسی بھی شہری کی شکایت پر غفلت برتنے کی اجازت نہیں جانے دی جائے گی وزیراعظم نےسیٹیزن پورٹل پر درج شکایات کو غیر سنجیدہ لینے والے افسران کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا عندیہ دیا ہے  معاملے کی انکوائری رپورٹ وزیراعظم کو 20 جولائی 2021 کو پیش کی جائے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں