یہودیوں کی پیغمبراسلام کی شان میں گستاخی،فلسطینیوں کااحتجاج،یہودی فورسزکا لا ٹھی چارج

غزہ(نیوزٹویو) صیہونی گروپ کی جانب سے بیت المقدس میں پیغمبر اسلام کی شان میں گستاخی پرفلسطینی سراپا احتجاج بن گئے نماز جمعہ کے بعد ہزاروں فلسطینیوں نے مسجد الاقصیٰ کے باہر احتجاج کیاجن پر صیہونی فورسز نے لاٹھی چارج کیا اور آنسو گیس کے گولے برسائے ربڑ کی گولیاں لگنے سے خواتین سمیت 47 مظاہرین زخمی ہوگئےتفصیلات کے مطابق بیت المقدس میں شدت پسند یہودیوں نے اسرائیلی سرپرستی میں ریلی نکالی مشرقی یروشلم میں یہودی قوم پرستوں نے مارچ کیااور اسلام کے خلاف توہین آمیز جملے کسے جس پرفلسطینی سراپا احتجاج بن گئے اورنماز جمعہ کے بعد ہزاروں فلسطینی مسجد الاقصیٰ کے باہر جمع ہوگئے صیہونی فورسز نے احتجاجی مارچ شروع ہونے سے پہلے ہی مسجد الاقصیٰ پر دھاوا بول دیااورمظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے طاقت کا بے دریغ استعمال کیا لاٹھی چارج اور شیلنگ سےخواتین اور بچوں سمیت درجنوں فلسطینی زخمی ہوگئےریڈ کریسنٹ کے مطابق زیادہ تر زخمیوں کو ربڑ کی گولیاں لگیں ایک صحافتی ادارے کے مطابق زخمیوں میں ان کی دو خواتین صحافی بھی شامل ہیں۔صحافی لطیفہ عبد الطیف کے گھٹنے پر ربڑ کی گولی لگی جبکہ ایک اور خاتون صحافی سندس ایویس بھی زخمی ہیں دوسری جانب اسرائیلی طیاروں نے ایک بار پھر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئےغزہ کی پٹی پر بمباری کی تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں