سپریم کورٹ میں ججز کی تعیناتی کے طریقہ کار کے خلاف پاکستان بار کونسل کا یوم سیاہ

اسلام آباد(نیوزٹویو) سپریم کورٹ میں ججز کی تعیناتی کے طریقہ کار پر اعتراض کے حوالےسے وکلاء کی تنظیم پاکستان بار کونسل کی کال پر ملک بھر میں یوم سیاہ منایا گیا۔بدھ کو ملک بھر کی بار کونسلز اور بار ایسوسی ایشنز نے بھی پاکستان بار کونسل کی جانب سے یوم سیاہ کی کال کی حمایت کی جبکہ بعض شہروں میں عدالتوں کا بائیکاٹ بھی کیا گیا۔معروف وکیل رہنما حامد خان کا کہنا  ہے کہ یہ یوم سیاہ کی کال تھی جو پاکستان بار کونسل نے دی۔ اور اس کی وجہ ہے کہ سندھ ہائی کورٹ سے ایک جونئیر جج کو سپریم کورٹ میں تعینات کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ اور اگر یہ تعیناتی ہوتی ہے تو یہ پانچویں جج ہوں گے جو مروجہ طریقہ کار کو پس پشت ڈالتے ہوئے تعینات کیے جا رہے ہیں

انہوں نے مزید کہا کہ چونکہ تمام صوبوں کی ہائی کورٹس سے جج سپریم کورٹ میں لیے جاتے ہیں تو کسی بھی ہائیکورٹ کے چیف جسٹس کا قانونی حق ہے کہ ان کو سپریم کورٹ لے جایا جائے نہ کہ ان کے کسی جونیئر جج کوتعینات کیا جا ئےانہوں نے بتایا کہ اگر وکلا کے احتجاج کو نظر انداز کیا گیا تو قانونی رستہ اختیار کیا جائے گا ہم اس تعیناتی کو سپریم کورٹ میں چیلنج کریں گے۔ اور اس تعیناتی اور طریقہ کار کو روکیں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں