مانیٹری پالیسی میں شرح سود 7 فیصد پر برقرار رکھنے کا فیصلہ، اسٹیٹ بینک آف پاکستان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) نے آئندہ دو ماہ کے لیے مانیٹری پالیسی جاری کردی۔ جبکہ اس دوران شرح سود 7 فیصد پر برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا تھا کہ آئندہ دو ماہ کے لیے شرح سود 7 فیصد پر برقرار رہے گی۔ گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ پالیسی ریٹ مہنگائی کی شرح سے کم ہے۔ معاشی ماہر اسے منفی شرح سود کہتے ہیں، تاہم حقیقی شرح سود منفی رکھنے کا سبب نمو پر توجہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 10 سال میں کم ترین سطح پر ہے۔ رضا باقر نے بتایا کہ کووڈ 19 کے دوران کیے اقدامات کے باعث معاشی اعداد بہتر ہوئے ہیں، جبکہ کووڈ کی وباء میں پالیسی سپورٹ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔ گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ پالیسی ریٹ کو مسلسل پانچویں بار مستحکم رکھا گیا ہے۔ گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ پالیسی ریٹ کو مسلسل پانچویں بار مستحکم رکھا گیا ہے۔ رضا باقر نے کہا کہ جون کے مہینے میں مہنگائی کی شرح 8.9 فیصد رہی۔ ان کا کہنا تھا کہ جون میں کرنٹ اکاؤنٹ بڑھنے کا سبب سیزنل رہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں