مدرسہ زیادتی کیس،ڈی این اے ٹیسٹ،مفتی عزیزاورطالب علم کے نمونےمیچ نہیں ہوئے

اسلام آباد (نیوزٹویو) مدرسے کے طالب علم سے زیادتی کیس میں گرفتار مفتی عزیزالرحمن کے کیس میں ڈرا ما ئی موڑ سا منے آیا ہے ڈی این اے ٹیسٹ رپورٹ میں عزیزالرحمن اور طالب علم کے نمونے میچ نہیں ہو ئے ہیں ڈی این اے کی ٹیسٹ رپورٹ عدالت میں پیش کر دی گئی ہے اور اسے پولیس نے مقدمےمیں سرکاری ریکارڈ کا حصہ بھی بنا دیاہے تفصیلا ت کے مطابق لاہورکے ایک مدرسے کے مفتی عزیزا لرحمن پر طالب علم نے زیادتی کا ا لزام عائد کیا تھا اور ثبوت کے طور پر ایک و یڈیو بھی پیش کی تھی جو دوسرے طا لب علم نے چھپ کر بنا ئی تھی تاہم اب ڈی این رپورٹ کے نتا ئج مفتی عزیزا لرحمن پر طالب علموں کی طرف سے لگائے گئے ا لزامات کی نفی کرتے ہوئے دکھا ئی دے رہے ہیں مفتی عزیزا لرحمن کیس میں ڈی این اے کے نموںوں کا میچ کرنا ضروری تھا تاکہ عدالت کسی حتمی نتیجے پر پہنچ سکے پو لیس کے مطابق مفتی کے طالبعلم سے زیادتی کے مقدمے کی تحقیقات ابھی جاری ہیں جبکہ پنجاب فرانزک لیب کی ڈی این اے رپورٹ کے مطابق مفتی عزیز الرحمن  کے نمونے میچ نہیں ہوئےمفتی عزیز الرحمن  کی ڈی این اے رپورٹ فرانزک لیب نے 24 جون کو جاری کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جنسی زیادتی کا الزام عائد کرنے والے مدعی مقدمہ اور ملزم دونوں کے سیمپل لیے گئے تاہم کسی بھی طرح سے کوئی زیادتی کے شواہد سامنے نہیں آئے ہیں البتہ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اس ابتدائی رپورٹ کے جاری ہونے کے بعد مزید شواہد لیب کو دئیے جائیں تو مزید فرانزک تحقیقات کی جاسکتی ہیں۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں