کا بینہ کی سکیورٹی کانیانظام وضع کرنے کے لیےتھریٹ کمیٹی تشکیل،سائبر سکیورٹی پالیسی کی منظوری،فوادچوہدری بریفنگ

 اسلام آباد (نیوزٹویو) وزیراعظم نے سکیورٹی کا نیا نطام وضع کرنے کی ہدایات دے دی ہیں وفاقی کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ نیا سکیورٹی نطام وضع کرنے کے لیے تھریٹ کمیٹی تشکیل دی جائے گی وفاقی کابینہ نے نیشنل سائبر سکیورٹی پالیسی دو ہزار اکیس کی منظوری دے دی ہے۔ وزیراعظم کے زیر صدارت اجلاس میں بیس نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔ شرکا کو اوور سیز پاکستانیوں کو الیکٹرونک ووٹنگ کا حق دینے سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔

 وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کا بینہ ا جلاس کے بعد میڈیاکو بریفنگ دیتے ہو ئے بتایا کہ ملک میں سب سے زیادہ سکیورٹی کے اخراجات عدلیہ اور سب سے کم کابینہ پر ہو رہے ہیں پاکستان تحریک انصاف کی حکومتوں یعنی وفاق، خیبرپختونخوا، پنجاب، گلگت بلتستان اور اب کشمیر میں انفرادی طور پر خطرے کا جائزہ لیا جائے گا اور اس کے مطابق سکیورٹی کا بندوبست کیا جائے گا اور اس کے نتیجنے میں کروڑوں روپوں کی بچت ہو گی اٹارنی جنرل اور وزیر قانون اس ضمن میں عدلیہ سے بات کریں گے عدلیہ کی سکیورٹی کیسے بہتر بنائی جاسکتی ہے یہ ایک اہم جزو ہے۔ فواد چوہدری نے کہا کہ صدر، وزیراعظم، گونررز، وزرائے اعلیٰ، مشیران اور معاونین خصوصی کی سکیورٹی پر 762 پولیس اہلکار، 14 رینجرز اور ایف سی کے اہلکار تعینات ہیں ان شخصیات پر سکیورٹی کا کل خرچہ 70 کروڑ کا ہو رہا ہےجج صاحبان کی سکیورٹی پر 377 پولیس اہلکار مامور ہیں اور اسلام آباد میں عدلیہ کی سکیورٹی پر 28 کروڑ 70 لاکھ روپے خرچ ہو رہے ہیں۔اسلام آباد اور لاہور میں ججوں کی سکیورٹی پر 14 ملین روپے خرچ ہو رہے ہیں۔ اس میں خیبر پختونخوا، سندھ اور بلوچستان شامل نہیں۔پنجاب پولیس کے تمام اخرجات چار سو 46 ملین ہیں سابق سرکاری ملازمین، ریٹائرڈ افسران، سابق وزراء اعظم اور صدور کی سکیورٹی پر تین سو ملین کے اخراجات ہو رہے ہیں اہم سرکاری شخصیات کی سکیورٹی پر ایک سو چھ پولیس اہلکار، چار رینجرز اور 47 ایف سی اہلکار تعینات ہیں اور ان کا خرچ ایک سو نو اعشاریہ سات ملین روپے ہے

فواد چوہدری نے کہا کہ پی ٹی آئی واحد حکومت ہے جس نے شفاف انتخابات کو یقینی بنایا ہےانہوں نے کہا کہ پاکستان میں بڑے معاملات پر حکومت اور اپوزیشن کو ایک ہونا چاہیے۔ حکومت انتخابی اصلاحات پر اپوزیشن کے ساتھ سنجیدہ گفتگو چاہتی ہےوزیراعظم نے کابینہ اجلاس میں پاکستان کے زیرانتظام کشمیر میں انتخابی مہم پر علی امین گنڈا پور، مراد سعید ، علی محمد خان اور  شہریار آفریدی کی تعریف کی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں