کراچی کورونا کیسزبےقابو،شرح26فیصدسےزائدہو گئی، لاک ڈاؤن پر غؤر

اسلام آباد(نیوزٹویو) کراچی میں کورونا وائرس بے قابوہوگیاسندھ کے محکمہ صحت کے مطابق صوبے میں کورونا وائرس کے کیسز کی شرح 26چھبیس فیصد سے زا ئد ہو گئی ہے جبکہ صوبے میں اس کی شرح 12فیصد سے زیادہ ہےسندھ حکومت نے شہریوں ہرزیادہ سختی کرنے کا فیصلہ کرلیا کورونا کیسز میں اضا فہ نہ رکنے کی صورت میں سندھ حکومت نے لا ک ڈاؤن پر غور شروع کر دیاوزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے ٹاسک فورس اجلاس میں افسران کو پابندیوں پرمکمل عملدرآمد کرانے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ کورونا پر سیاست نہیں ہونی چاہیے، کوئی غیر ضروری گھر سے باہر نہ نکلے۔ کمشنر اور آئی جی سندھ کراچی میں شام 6 بجے کے بعد مکمل پابندی لگائیں۔وزیراعلیٰ سندھ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ مجھے پتا چلا ہے کہ ٹیوشن سینٹرز چل رہے ہیں، انہیں بھی بند کرائیں۔۔ جمعہ کو دوبارہ شہر میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ اگر صورتحال بہتر نہ ہوئی تو مزید اقدامات کریں گے۔وزیراعلیٰ  سندھ نے سٹیک ہولڈرز اور سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لینے کیلئے صوبائی وزرا پر مشتمل کمیٹی بھی قائم کر دی جس میں ناصر شاہ، مرتضیٰ وہاب اور اویس شاہ شامل ہیں۔اجلاس میں بتایا گیا کہ صوبے میں کورونا وائرس کی تشخیص کا تناسب 12.7 فیصد جبکہ کراچی میں 26.32 فیصد تک پہنچ گیا۔ بتایا گیا کہ جولائی میں کورونا سے 362 مریض جاں بحق ہوئے۔ سندھ کے ہسپتالوں میں وینٹ کے ساتھ 686 آئی سی یو بیڈز موجود ہیں۔ وزیراعلیٰ نے مختلف ہسپتالوں میں کورونا وارڈز بنانے کی ہدایت کر دی ہے دریں اثنا وزیر زراعت سندھ اسماعیل راہو نے ہدایت کی کہ مارکیٹس کمیٹی کے چیئرمینز اور محکمہ زراعت کے افسران ایس او پیز پر عملدرآمد کروائیں دوسری جانب وزیر صنعت وتجارت جام اکرام اللہ دھاریجو کا کہنا ہے کہ کورونا کیسز میں مزید اضافے کے باعث مجبوراً لاک ڈاؤن کی طرف جانا پڑ سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں