کشمیر کے فیصلے کشمیری عوام کریں، ہم کسی کی ڈکٹیشن نہیں مانتے، بلاول بھٹو زرداری

باغ (نیوز ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ جنگ کرنی ہے یا امن کرنا ہے، فیصلہ کشمیریوں کے حکم پر کریں گے۔ کشمیر کے فیصلے کشمیری عوام کریں، ہم کسی کی ڈکٹیشن نہیں مانتے۔ انتخابی جلسے سے خطاب میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ کشمیری حکم کریں، جنگ کرنی ہے تو ہم ساتھ ہوں گے۔ کشمیری حکم کریں گے کہ امن کرنا ہے تو ہم امن کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کشمیر کے فیصلے کشمیری عوام کریں۔ ہم کسی کی ڈکٹیشن نہیں مانتے، عوام کا حکم مانتے ہیں۔ پی پی چیئرمین نے کہا کہ 25 جولائی آزاد کشمیر کے لئے امتحان ہے۔ الیکشن شفاف ہوئے تو یہ نشستیں پیپلز پارٹی کی ہوں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ عوام نے ساتھ دیا تو ہم باغ کی قسمت بدل دیں گے۔ پیپلز پارٹی کا آپ سے تین نسلوں کا رشتہ ہے۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ باغ کے جیالوں نے کارساز میں بی بی کا استقبال کرتے ہوئے جام شہادت نوش کیا، کوئی کٹھ پتلی جماعت آپ سے ہمارا تعلق نہیں توڑ سکتی۔ انہوں نے کہا کہ بینظیر بھٹو جب وزیراعظم تھیں تو پوری دنیا پاکستان کی بات سنتی تھی آج کٹھ پتلی بات کرتا ہے تو لوگ مذاق اڑاتے ہیں۔ پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان کا وزیراعظم عمران خان، بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے جیتنے کی دعا کرتا رہا ہے، کسی کٹھ پتلی کو کشمیر کا سودا کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ بلاول بھٹو نے یہ بھی کہا کہ آزاد کشمیر میں آج تک ن لیگ کی حکومت ہے، انہوں نے آپ کیلئے کیا کیا؟ یہاں کی حکومت نے آپ کو لاوارث چھوڑا، ہم نہیں چھوڑیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں