گریڈسترہ کے ملازمین کوایف پی ایس سی کا ٹیسٹ پاس کیے بغیر مستقل نہیں کیا جا سکتا،سپریم کورٹ

اسلام آباد (نیوز ٹویو) چیف جسٹس آف پا کستان جسٹس گلزاراحمد نے کہا ہے کہ گریڈ سترہ17 کے ملازمین  فیڈرل پبلک سروس کمیشن( ایف پی ایس سی) کا ٹیسٹ دئیے بغیر مستقل نہیں ہوسکتے یہ ریمارکس انہوں نے سپریم کورٹ میں خیبرپختونخومیں گریڈ 17 کے 67 لیکچرارز کی مستقلی سے متعلق زیر سماعت کیس میں دئیےعدالت نے لیکچرارز مستقلی سے متعلق کیس واپس پشاور ہائیکورٹ کوبھیج دیا اور حکم دیا کہ پشاور ہا ئیکورٹ چار ماہ میں کیس کا فیصلہ کرے کیس کی سماعت کرتے ہو ئے جسٹس اعجازالاحسن نے سوال کیا کہ کنٹریکٹ پر کام کرنے والے 17 گریڈ کے ملازمین مستقل کیسے ہوسکتے ہیں؟ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ ملازمین ایک پروجیکٹ میں بھرتی ہوئے پھر مستقل کر دیئے گئے عدالت نے قرار دیا کہ گریڈ سترہ کا سول سرونٹ صرف پبلک سروس کمیشن کے ذریعے ہی بھرتی ہوسکتا ہے جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ بیک ڈور کنٹریکٹ میں بھرتیاں ہوئیں اور انہیں مستقل کیا گیابیک ڈور بھرتیاں کی جاتی ہیں اور پھر ایک ایکٹ لاکر انہیں مستقل کیا جاتا ہےہائیکورٹ میں جائیں وہاں سارے سوالات کھل کر سامنے آجائیں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں