ہم پا گل نہیں،قربانیاں دینے کےبعد ڈیل کریں،آزاد کشمیرالیکشن ن جیتےگی،مریم نواز

اسلام آباد(نیوزٹویو)پاکستان مسلم لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے حکومت کے ساتھ کسی بھی ڈیل کی خبروں کو سختی سےمسترد کرتے ہو ئے کہا ہے کہ کیا ہم پاگل ہیں کہ اتنی قربانیوں کے بعد انہیں سے ڈیل کر لیں جن کے خلاف جدوجہد کررہے ہیں آزاد کشمیر میں شفاف انتخابات ہوئے تو مسلم لیگ ن اکثریت سے کامیاب ہوگی منگل کوسینٹرپرویزرشید،کیپٹن صفدراورمریم اورنگزیب کے ہمراہ اسلام آباد ہا ئیکورٹ میں پیشی کے بعد صحافیوں کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئےانہوں نے کہا کہ اگر آزاد کشمیر انتخابات میں شفاف انتخابات ہوئے تو مسلم لیگ ن اکثریت سے کامیاب ہو گی لیکن عوام کو اس وقت انتظامیہ پر اعتماد نہیں ہے۔ آزاد کشمیر انتخابات میں اگر دھاندلی ہوئی تو اس کے دوررس نتائج نکلیں گےعمران حکومت کے جانے کاعلم توصرف اللہ تعالی کو ہی ہے لیکن جب یہ حکومت جائے گی توپھر کبھی واپس نہیں آئے گی۔

بلوچ مزاحمت کاروں سے بات کرنے کے وزیر اعظم عمران خان کے بیان پر مریم نواز نےکہا کہ بلوچستان کے لوگوں کے تحفظات دور کرنے چاہییں، لیکن کیا صرف ناراض بلوچوں کو منانا ضروری ہے، سب سے پہلے آپ کو ہزارہ برادری کے پاس جانا چاہیے تھا۔ وہ بھی بلوچستان میں رہتے ہیں۔ وہ آپ کو پکار رہے تھے اور آپ نے اس وقت کہا کہ میں لاشوں سے بلیک میل نہیں ہوں گا۔ آپ کے قول و فعل میں تضاد ہو گا تو بلوچستان آپ سے دور جائے گا۔ حکومت اسرائیل کو تسلیم کرنے یا نہ  کرنے کے بارے میں عوام کو سچ بتائےلگ رہا ہے کہ حکومت نے اسرائیل کو تسلیم کرنے کی تیاری کر لی ہے، اگرایسا نہیں ہے تو کوئی تردید کیوں نہیں آرہی، اگر ایسا ہے تو قوم کو بتائیں تاکہ قوم اپنا فیصلہ لے، یہ آپ کا ذاتی فیصلہ نہیں ہے، اگر آپ نے دوستی کرنی ہے تو یہ آپ نہیں کرسکتے، 22 کروڑ عوام فیصلہ کریں گے، ان کواعتماد میں لیں اورسچ بتائیں۔ ہمیں چا ہیئےکہ ہم پہلے اپنا گھر ٹھیک کریں فارن پالیسی آپ کے سیاسی موقف سے جڑی ہوئی نہیں ہونی چاہیے یہ قوم کےموقف کی پالیسی ہونی چاہیے۔ حکومت کو قوم کی آنکھوں میں دھول نہیں جھونکنی چاہیے۔

اس سوال پر کہ مسلم لیگ خاموش کیوں ہے؟ تو مریم نواز نے جواب دیا مسلم لیگ آپ کے سامنے کھڑی بول رہی ہے۔ اسی طرح پی ڈی ایم کے جلسے میں شہباز شریف شریک ہوئے تھے اور وہ مسلم لیگ ن کی طرف سے نمائندگی کر رہے تھی مریم نواز کی عدالت میں پیشی کے موقع پر پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری عدالت کے اطراف موجود تھی اور سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ انتظامیہ کی جانب سے کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے عدالت کے اطراف خاردار تاریں لگائی گئی تھیں۔ مریم نواز کی بیٹی کو بھی اسلام آباد ہائی کورٹ میں داخل ہونے سے روک دیا گیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں