5 جولائی آج بھی سیاہ ترین دن قرار، آمریت پسند قوتوں کے درمیان جنگ آج بھی جاری، بلاول بھٹو

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے 5 جولائی 1977 کو پاکستانی تاریخ کا سیاہ ترین دن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ جمہوری اور آمریت پسند قوتوں کے درمیان جنگ آج بھی جاری ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے سانحہ 5 جولائی 1977 پر اپنے پیغام میں کہا کہ اس روز شہید ذوالفقار علی بھٹو کی زیر قیادت جمہوری منتخب عوامی حکومت پر شب خون مارا گیا، 5 جولائی 1977 کو پاکستان کی تاریخ میں ہمیشہ ایک سیاہ ترین دن کے طور پر یاد کیا جائے گا۔ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ذوالفقار علی بھٹو نے سقوط ڈھاکا کے بعد ٹکڑوں میں بٹی قوم کو متحد کیا، بھٹو نے اتفاقِ رائے سے آئین کی منظوری کی سرپرستی کی۔ انہوں نے پاکستان کی میکرو اکانومی کی بنیاد رکھی، ہر پاکستانی کو شہریت اور پاسپورٹ کا حق دیا، قائد عوام نے ملک کو ایٹمی طاقت بننے کی راہ پر گامزن کیا۔ چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے ریاست کو جمہوری بنایا، قائدِ عوام نے چند سلیکٹڈ افراد تک محدود اقتدار چھین کر عوام کو اختیارات منتقل کیے اور انہیں بااختیار بنایا۔ انہوں نے کہا کہ 1977 کا مارشل لاء پاکستان کی عوام پر بدترین حملہ تھا، اس مارشل لاء کا خمیازہ آمر کی موت کو کئی دہائیاں گزرنے کے باوجود قوم تاحال بھگت رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 5 جولائی1977 کی بغاوت نے عدم رواداری، انتہاپسندی اور دہشت گردی کے بیج بوئے اور ان کی آبیاری کی، ان کی جڑوں کو ہمارے معاشرے میں سرایت کرنے دیا، جو آج ہمارے لیے باعثِ مصیبت بنی ہوئی ہیں۔ چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے ریاست کو جمہوری بنایا، قائدِ عوام نے چند سلیکٹڈ افراد تک محدود اقتدار چھین کر عوام کو اختیارات منتقل کیے اور انہیں بااختیار بنایا۔ انہوں نے کہا کہ 1977 کا مارشل لاء پاکستان کی عوام پر بدترین حملہ تھا، اس مارشل لاء کا خمیازہ آمر کی موت کو کئی دہائیاں گزرنے کے باوجود قوم تاحال بھگت رہی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ 5 جولائی1977 کی بغاوت نے عدم رواداری، انتہاپسندی اور دہشت گردی کے بیج بوئے اور ان کی آبیاری کی، ان کی جڑوں کو ہمارے معاشرے میں سرایت کرنے دیا۔ جو آج ہمارے لیے باعثِ مصیبت بنی ہوئی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں