اسلام آبادہائیکورٹ کانیوی اور ایئرفورس کےخلاف مارگلہ ہلزپارک میں تجاوزات پرکارروائی کاحکم

اسلام آباد (نیوزٹویو)اسلام آباد ہائی کورٹ نے نیوی اور ائیر فورس کے خلاف مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں تجاوزات پر کارروائی کا حکم دے دیا ہے منگل کو اسلام آباد ہا ئیکورٹ میں مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں تجاوزات کے خلاف کیس کی سماعت ہو ئی وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کی چیئرپرسن رائنا سعید خان عدالت کے سامنے پیش ہو ئیں جبکہ وکیل وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ دانیال حسن، ڈپٹی اٹارنی جنرل سید طیب شاہ عدالت میں پیش ہوئےچیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ میڈیا رپورٹس ہیں نیوی اور ایئر فورس نے نیشنل پارک میں تجاوزات کئے ہیں عدالت نے چیئر پرسن وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ سے استفسار کیا کہ وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ نے ان کے خلاف کیا ایکشن لیاعدالت نے اظہار برہمی کرتے ہو ئے کہا کہ اگر نیشنل پارک میں کوئی بھی تجاوزات کرے تو اس کے کیا نتائج ہیں؟ عدالت نے استفسار کیا کہ مارگلہ ہلز نیشنل پارک تجاوزات پر آپ نے نیوی اور ایئر فورس کو نوٹس کیوں نہیں کیا؟ چیف جسٹس نے کہا کہ یہاں کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں، بے شک یہ عدالت قانون خلاف ورزی کرے آپ ایکشن لیں چیئرپرسن وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ نے کہا کہ ہم نے ایکشن نہیں لیا کیونکہ ہمارے پاس اختیارات نہیں چیف جسٹس نے کہا کہ اگر میں بھی قانون کی خلاف ورزی کروں تو آپ میرے خلاف بھی ایکشن لیں چیف جسٹس نےچیئرپرسن سے مکالمہ کرتے ہو ئے کہاکہ آپ کے کیا اختیارات ہیں؟ آپ کیا کر سکتے ہیں؟ آپ کو کیوں معلوم نہیں وکیل دانیال حسن  نے کہا کہ اسلام آباد وائلڈ لائف آرڈیننس 1979 کے تحت قید اور جرمانہ کی سزا ہو سکتی ہےبورڈ کے پاس سیکشن 29 کے تحت گرفتاری کا اختیار بھی موجود ہے عدا لت نے کہا کہ وائلڈ لائف سے متعلق اتنا موثر قانون موجود ہے آپ نے اس میں صرف ترامیم کرنی ہیں عدالت نے حکم دیا کہ وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ اس حوالے سے مناسب ایکشن لےعدالت نے کہا کہ وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کو جو اختیارات دیے گئے ہیں ان کے تحت ایکشن لیں کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں یہ بھی رپورٹ ہوا ہے کہ وفاقی حکومت نے بھی ایکشن لیا ہےچیئرپرسن صاحبہ، آپ کے پاس اختیارات ہیں اگر کوئی بھی قانون کی خلاف ورزی کر رہا ہے تو ایکشن لیں کیس کی مزید سماعت 27 اگست تک ملتوی کر دی گئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں