انس حقانی کی افغان کرکٹ ٹیم کے کپتان اوردیگر کھلا ڑیوں سے ملاقات،تعاون کی یقین دہانی

کابل (نیوزٹویو) افغان طالبان نے افغانستان کی کرکٹ ٹیم کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلا یا ہے اور انہیں کرکٹ کی سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے کہا ہے افغانستان کرکٹ بورڈ نے اعلان کیا ہے کہ میچز کا شیڈول تبدیل نہیں ہوا میچزتین، پانچ اور آٹھ ستمبر کو ہی کھیلے جائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کے ساتھ سیریز کے لیے افغان کرکٹ ٹیم کی سری لنکا روانگی سے قبل طالبان کے سینیئر رہنما انس حقانی نے کابل میں کرکٹ ٹیم کے کپتان حشمت شہیدی اور دیگر کھلاڑیوں سے ملاقات کر کے انہیں طالبان کی طرف سے مکمل تعاون کا یقین دلایا ہےاس حوالے سے افغان کرکٹ بورڈ کے سابق میڈیا منیجر ابراہیم مہمند نے ایک تصویر شئیر کی ہے جس میں انس حقانی حشمت شہیدی اور دیگر افغان کھلاڑیوں اور کرکٹ بورڈ عہدیداران کے ساتھ کھڑے ہیں ملاقات میں افغانستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی نور علی زدران اور سلیکشن کمیٹی کے سابق رکن اسد اللہ خان بھی موجود ہیں۔اس حوالے سے افغانستان کرکٹ بورڈ کے ترجمان حکمت حسن نے کہا ہے کہ طالبان کے کابل میں آنے سے کرکٹ ٹیم کو کوئی مسئلہ نہیں ہوا کیونکہ طالبان کی طرف سے کرکٹ بورڈ کو پیغام دیا گیا ہے کہ وہ اپنی سرگرمیاں جاری رکھیں۔

ٹیم کی انس حقانی سے ملاقات کے حوالے ان کا کہنا ہے کہ یہ ملاقات کرکٹ بورڈ کے احاطے میں نہیں ہوئی تاہم افغان کرکٹر کسی سے بھی ملاقات کر سکتے ہیں۔ افغان کرکٹ ٹیم پاکستان کے دورے کے لیے مکمل طور پر تیار ہے اور سری لنکا روانگی کے لیے کون سا راستہ اختیار کرنا ہے، ابھی اس پر ابھی دو تین آپشنز پر غور ہو رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ افغانستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین عزیز اللہ فضلی افغانستان کرکٹ بورڈ کا نظام اور آئندہ ہونے مقابلوں کی نگرانی کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ٹیم کے زیادہ تر کھلاڑی افغانستان سے روانہ ہوں گے جبکہ راشد خان سمیت چند کھلاڑی بین الاقوامی لیگ کرکٹ کے لیے پہلے ہی ملک سے باہر ہیں، وہ وہیں سے ٹیم کے ساتھ شامل ہو جائیں گے۔

واضح رہے کہ افغانستان کرکٹ ٹیم ستمبر میں پاکستان کے ساتھ ون ڈے سیریز کے لیے سری لنکا روانہ ہو رہی ہے۔ تاہم کابل پر طالبان کے قبضے کے بعد کابل ایئرپورٹ پر کمرشل فلائٹس کی عدم دستیابی کے باعث ٹیم انتظامیہ پاکستان تک زمینی راستہ استعمال کرتے ہوئے سری لنکا جانے پر غور کر رہی ہے۔اس سے پہلے طالبان کے سیاسی دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے افغانستان میں کرکٹ کے مستقبل کے حوالے سے خدشات کو کم کرنے کی کوشش کی تھی اور کہا تھا کہ طالبان کے برسراقتدار آنے کے بعد بھی افغانستان کرکٹ ٹیم برقرار رہے گی۔کرکٹ جاری رہے گی اور جس قدر ہم سے ہو سکا کرکٹ میں مزید بہتری لائیں گے۔ جس وقت ہم برسراقتدار تھے تو کرکٹ کو ہم نے ہی متعارف کروایا تھا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں