ایمنسٹی انٹرنیشنل کااقبال پارک میں خاتون کوہراساں کرنے کےواقعہ پراظہارتشویش،ذمہ داروں کےاحتساب کا مطالبہ

اسلام آباد(نیوزٹویو)انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے لاہور کے مینار پاکستان پر خاتون کو ہجوم کی جانب سے ہراساں کرنے کے واقعے پرتشویش کا اظہار کرتے ہو ئے ملوث افراد کا احتساب کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔بدھ کو ٹوئٹر پر جاری بیان میں ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کہا ہے کہ ایک ایسے وقت جب ملک نور مقدم اور قرۃ العین کے قتل کی ہولناکی سے گزر رہا تھا اسی دوران لاہور میں ایسا واقعہ ایسا ہوجانا مزید خوف کو بڑھا رہا ہے۔حکام فوری طور پر ملوث افراد کا احتساب کریں اور خواتین کو عوامی مقامات پر مزید تحفظ فراہم کریں۔

واضح رہے کہ منگل کو شاہدرہ لاہور کی رہائشی عائشہ اکرم نے تھانہ لاری اڈہ میں درخواست دی تھی کہ ’وہ 14 اگست کو شام ساڑھے چھ بجے اپنے ساتھی کارکن عامر سہیل، کیمرہ مین صدام حسین اور دیگر چار ساتھیوں کے ہمراہ گریٹر اقبال پارک میں مینار کے قریب یوٹیوب کے لیے ویڈیو بنا رہی تھیں کہ اچانک وہاں موجود تین چار سو افراد نے ان پر حملہ کردیاانہوں نے ہجوم سے نکلنے کی بہت کوشش کی لیکن ناکام رہیں تاہم گارڈ کی جانب سے جنگلے کا دروازہ کھولے جانے کے بعد وہ اندر چلے گئےاس کے بعد بھی ہجوم جنگلے پھلانگتا ہوا ان کے پیچھے آیا، اس میں شامل لوگوں نے ان کے ساتھ بدتمیزی کی، کپڑے پھاڑ دیے اور ان کے ساتھ غیر اخلاقی سلوک کرتے رہے

اس افسوسناک واقعے پر ایک ٹویٹ میں وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہباز گل  نے کہا ہے کہ ’بہت جلد گریٹر اقبال پارک مینار پاکستان کے واقعہ میں ملوث ملزمان کو پولیس گرفتار کرکے سخت ترین کارروائی کرے گی اعلیٰ پولیس افسران لاہور واقعے کی ویڈیوز کا جائزہ لے چکے ہیں اب ان ویڈیوز سے ملزمان کی شناخت، نام، ولدیت اور پتہ نادرا سے معلوم کریں گےقانون ہر صورت ان ملزمان کو سخت ترین سزائیں دے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں