طالبان کا قومی سلامتی کمیٹی ا علامیے کا جواب،افغان زمین دہشت گردی کے لیے استعمال نہ ہونے کی یقین دہانی

  اسلام آباد (ویب نیوز) طالبان نے قومی سلامتی کمیٹی کے اعلامیے کا جواب دے دیا طالبان نے افغان سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف دہشت گردی کے لیے  استعمال نہ ہونے کی یقین دہانی کرا دی ہے طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے کہا ہے کہ ہم کسی کوبھی افغانستان کی سرزمین دوسرے ملک کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اقلیتی برادری کے کاموں میں بھی کوئی رکاوٹ نہیں ڈالیں گےافغانستان میں تمام لوگ قانون کی نظرمیں برابر ہے۔ تمام گروہوں کواسلامی حکومت میں شامل کریں گےنجی ٹی وی سے گفتگو میں ان کا کہنا تھا کہ ہم کسی کوبھی افغانستان کی سرزمین دوسرے ملک کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہم تمام ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں، تمام ہمسایہ ملکوں کے ساتھ اکانومی کا حب بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اشرف غنی عوام کوبتائے بغیرہی ملک چھوڑکرچلے گئے، ملک چھوڑنے کا انکے قریبی ساتھیوں کوبھی علم نہیں تھا۔ ملا عبد الغنی برادر اس وقت قطر میں ہیں۔ سہیل شاہین نے کہاکہ ہم نے اپنی فورسز کو کہا ہے کابل میں داخل ہونے کے بجائے قریب رہیں۔ کابل کی سیکیورٹی کوبہترکریں گے۔ ہم اسلامی گورنمنٹ بنائیں گے۔ دوحا میں بات چیت کا آپشن اب ختم ہوچکا ہے۔انہوں نے بھارت کے حوالے سے کہا کہ بھارت کا رونا دھونا بےجا ہے۔ ان کا رونا دھونا افغان حکومت ختم ہونے پرہے ان کا رونا دھونا نہیں ہونا چاہیے، افغان عوام جوحکومت بنائے انہیں تسلیم کرنا چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں