نورمقدم قتل کیس،مالک تھراپی سنٹر ڈاکٹرطاہراورملازم امجدسمیت مزید 7ملزم گرفتار

اسلام آباد(نیوزٹویو) اسلام آباد دپولیس نے نور مقدم کے قتل کیس میں مزید چھ افراد کو گرفتار کر کے عدالت میں پیش کرکے ان کا ایک روزہ جسمانی ریمانڈ لے لیا ہےان افراد کوہفتہ اوراتوار کی شب گرفتار کیا گیا پولیس حکام کے مطابق گرفتار کیے گئے افراد میں تھراپی سینٹر کے مالک ڈاکٹر طاہر اوران کے ملازمین شامل ہیں۔ ان ملزمان کو گرفتار کر کے عدالت کے سامنے پیش کیا گیاعدالت نے ایک روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا  ان گرفتار افراد میں تھراپی سینٹر کے زخمی ملازم محمد امجد بھی شامل ہے جسے ملزم ظاہر جعفر نے مبینہ طور پر چھری مار کر زخمی کیا تھا۔پولیس محمد امجد کا گزشتہ ہفتے بیان ریکارڈ کرچکی ہے اور زخمی ہونے کی وجہ سے پولیس نے امجد کی گرفتاری کو التوا میں رکھا تھاپولیس کے مطابق گرفتار کیے گئے چھ ملزمان پر شواہد چھپانے کا الزام ہے قبل ازیں مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے گھر پر مالی کا کام کرنے والے جان محمد ولد خان محمد کو بھی عدالت نے گزشتہ روز 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا۔ ملزم ظاہر جعفر کواب 16 اگست کو جوڈیشل میجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں