پی ڈی ایم حکومت کے خلاف تحریک چلانےکافیصلہ نہ کرسکی،پیپلزپارٹی اور اے این پی کے خالی عہدوں پر تقرریوں کی تجویز،

اسلام آباد (نیوزٹویو) پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ حکومت کے خلاف کسی قسم کی کو ئی تحریک چلانے کا فیصلہ نہیں کر سکی پی ڈی ایم میں پیپلزپارٹی اور اے این پی کے خالی کردہ عہدوں پر نئی تقرریوں کی تجویز دے دی گئی ہےجبکہ پی ڈی ایم  نے حکومت کی تجویز کردہ انتخابی اصلا حات اور اس حوالےسے اپوزیشن جماعتوں کی کی جانے والے پیش کش کو مسترد کردیا ہے اورآئندہ الیکشن میں الیکٹرونک ووٹنگ مشینوں کے ممکنہ ا ستعمال کے خلاف عملی کو ششوں کے ذریعے حکومت کے اس ا قدام کوروکنے کا فیصلہ کیا ہے مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے مہنگائی کے خلاف ملک گیر مہم چلانے کی تجویز دےدی ہے ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان کی صدارت میں ہونے والے پی ڈی ایم سربراہی اجلاس میں انتخابات ترمیمی بل پر حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ پی ڈی ایم اس معاملے پر سخت موقف اختیار کرے گی اس کے علاوہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے متعلق بھی پی ڈی ایم نے سخت موقف اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس کے دوران قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب شیر پاؤ نے بڑا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پی ڈی ایم کی خالی نشستوں کو پر کیا جائےپیپلز پارٹی اور اے این پی کے خالی کردہ عہدوں پر تقرریاں کی جائیں۔اجلاس کے دوران پی ڈی ایم نے حکومت کے ہر طرح کے الیکشن ریفارم کو مسترد کر دیا ہے۔ پی ڈی ایم نے الیکشن پر مکمل توجہ مرکوز کرنے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے ملک گیر مہنگائی کے خلاف تحریک چلانے کی تجویز دی۔
 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں