برطانیہ کی عدالت سے شریف خاندان اور شہباز شریف منی لا نڈرنگ الزامات سے بری،نیب اور حکومت جھوٹے ثابت

لندن(نیوزٹویو) پا کستان کی حکومت اور نیب کی جانب سے شریف خاندان اور شہباز شریف پر برطانیہ منی لا نڈرنگ کے ذریعے پیسہ بھجوانے کے لگائے گئے الزا مات جھوٹ ثابت ہو گئے برطانوی عدالت نے شہباز شریف اور شریف خاندان کو منی لانڈرنگ کے الزامات سے بری کر دیا ہےبرطانوی عدالت نے شہباز شریف اور ان کے خاندان کے منجمد اکاؤنٹس بھی بحال کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ برطانوی کرائم ایجنسی نے منجمد بینک اکاؤنٹس کی رپورٹ ویسٹ منسٹر کورٹ میں جمع کرا دی ہےجمع کرائی گئی رپورٹ کے مطابق شہباز شریف کے بینک اکاؤنٹس میں منی لانڈرنگ کا کوئی ثبوت سامنے نہیں آیا ہے اور 21 ماہ کی تحقیقات میں 20 سال کے مالی معاملات کا جائزہ لیا گیا۔انہوں نے کہا کہ برطانوی ایجنسی نے حکومت پاکستان اور قومی احتساب بیورو (نیب) کی درخواست پر تحقیقات شروع کی تھیں۔ تحقیقات کے دوران شہباز شریف اور شریف خاندان کے برطانیہ اورمتحدہ عرب امارات میں اکاؤنٹس کی چھان بین کی گئی۔ شہباز شریف کے بینک اکاؤنٹس دسمبر 2019 میں عدالتی حکم پر منجمد کیے گئے تھے۔شہباز شریف اور سلیمان شہباز کے بینک اکاؤنٹس کو اعلیٰ درجے کی تحقیقات سے مشروط کیا گیا تھا۔ ان اکاؤنٹس کو پاکستان کی برطانوی حکومت سے کرپشن کا پیسہ واپس لانے کی درخواست کے بعد منجمد کیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں