پاکستان کا افغانستان سے متعلق خصوصی سیل بنانے کا فیصلہ،قومی سلامتی کمیٹی اعلامیہ

 اسلام آباد(نیوزٹویو)  پا کستان کی  قومی سلامتی کمیٹٰی نے افغانستان کے لیے خصؤصی سیل قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے قومی سلامتی کمیٹی کے اعلامیے کے مطابق حکومتی سطح پر افغانستان سے متعلق کوشش سیل بنایا جائےگایہ سیل افغانستان کے لیے انسانی امداد کے بین الاقوامی روابط میں کردار ادا کرے گا جبکہ خصوصی سیل موثر بارڈر مینجمنٹ اور کسی بھی منفی پھیلاؤ کو روکنے کے لیے کام کرے گا اعلامیے کے مطابق سیاسی اورعسکری قیادت نے دنیا پر زور دیا ہے افغانستان انسانی بحران سے بچنے کے لیے مدد فراہم کی جائے افغانستان میں عدم استحکام کے پا کستان پر شدید اثرات ہوں گے جمعہ کو وزیراعظم کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا اجلاس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ عالمی برادری افغانستان میں انسانی بحران سے بچنے کیلئے اقدامات کرے، قومی سلامتی کمیٹی کا پڑوسی ملک میں دنیا کے بھرپور اور فوری کردار پر زور، پرامن، مستحکم اور خود مختار افغانستان کے عزم کا بھی اعادہ کیا گیا۔ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اہم اجلاس ہوا، جس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان، ڈی جی آئی ایس آئی، خارجہ، داخلہ ، دفاع اور خزانہ کے وفاقی وزراء اور مشیر قومی سلامتی امور نے شرکت کی۔

اجلاس میں وزیر اعظم کو علاقائی سلامتی کی صورتحال پر بریفنگ دی گئی۔ جبکہ اجلاس میں خطے کی مجموعی صورتحال پر غور کیا گیا۔ قومی سلامتی کونسل کےاعلامیہ کے مطابق اجلاس میں وفاقی وزرا،مسلح افواج کے سربراہان ، انٹیلی جنس سروسز چیفس نے شرکت کی۔اعلامیہ میں بتایا گیا کہ افغانستان میں حالیہ پیش رفت اور پاکستان پر ان کے ممکنہ اثرات پر بھی بریفنگ دی گئی جبکہ شرکا نے افغانستان میں بین الاقوامی برادری کے فوری کردار پر زور دیا۔اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ عالمی دنیا افغانستان میں انسانی بحران سے بچنے کیلئے مدد فراہم کرے۔قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں کہا گیا کہ خطے میں ابھرتی ہوئی صورت حال انتہائی پیچیدہ ہے، افغانستان میں کسی بھی عدم استحکام کے پاکستان پر شدید اثرات ہو سکتے ہیں جبکہ وزیر اعظم نے مربوط پالیسی کی کوششوں کی ضرورت پر زور دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں