آل پاکستان انجمن تاجران کاپوائنٹ آف سیل اور سیلزٹیکس رجسٹریشن کے خلاف کنونشن طلب

اسلام آباد(نیوزٹویو) ملک بھر کے تاجروں کی تنظیم آل پاکستان انجمن تاجران نے ایف بی آر کے پوائنٹ آف سیل کے منصوبے اور سیلز ٹیکس میں چھوٹے تاجران کی رجسٹریشن کے خلاف صورت حال پر غور کے لیے 17فروری کو اسلام آباد میں تاجروں کا کنونشن بلالیا- آل پاکستان انجمن تاجران اور ٹریڈرز ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے صدر اجمل بلوچ اور سیکرٹری و کنوینر ٹریڈرز کمیٹی آئی سی سی آئی خالد چوہدری نے اس حوالےسے کہا ہے کہ آئی ایم ایف کے حکم پر ایف بی آر نے تجارتی اداروں میں پوائنٹ آف سیلز ڈیوائس لگانے کا منصوبہ بنایا تھا جوکہ عملاً ناکام ہو چکا ہے۔ تاجروں نے اپنی دکانوں سے کریڈٹ کارڈ مشینیں ہٹا دی ہیں۔ جبکہ جن اداروں میں پوائنٹ آف سیلز ڈیوائس لگائی گئی ان کی سیلز میں 30 فیصد سے زائد کمی واقع ہو چکی ہے۔ ناکامی کا واضح ثبوت ایف بی آر کی طرف سے جاری کی گئی انعامی اسکیم ہے جس کی ابھی تک سمجھ نہیں آسکی کہ کن لوگوں کی قرعہ اندازی کی گئی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی او ایس لگانے والی کمپنیوں کے نمائندے کرپشن میں ملوث ہو چکے ہیں وہ سافٹ وئیر کو بائی پاس کرنے کے طریقے سکھا رہے ہیں اور کروڑوں روپے کرپشن کی مد میں وصول کر رہے ہیں۔ اسی وجہ سے بڑے اداروں کے سیلز ٹیکس کی مد میں کمی واقع ہو چکی ہے جبکہ سافٹ ویئر لگانے والے اہلکاروں کی پانچوں گھی میں ہیں۔ اس کرپٹ پریکٹس میں ایف بی آر کے اہلکار بھی ملوث لگتے ہیں پی، او ایس سسٹم ناکام منصوبہ ہے مسئلہ کا حل صرف ٹیکس نیٹ میں اضافہ اور چھوٹے تاجروں کے لیے فکس ٹیکس متعارف کروانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ گلی محلوں کے چھوٹے چھوٹے تاجروں کو جبری سیلز ٹیکس میں رجسٹرڈ کرنے کے نوٹس مل رہے ہیں جو کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں۔ صورت حال پر غور کرنے کے لیے 17 فروری کو پاکستان بھر کے تاجر نمائندوں کا کنونشن اسلام آباد میں منعقد ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں