ڈیرہ بگٹی میں دھماکے سے امن فورس کے 4اہلکارشہید،کالعدم تنظیم ملوث ہے،سینٹرسرفرازبگٹی

 ڈیرہ بگٹی(نیوزٹویو) ڈیرہ بگٹی کے علاقے سوئی میں دھماکے سے امن فورس کے4 رضاکار شہید اور 8 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ وزیراعلیٰ بلوچستان نے سوئی میں ہونے والے بم دھماکے کی مذمت کی ہے اور امن فورس کے رضا کاروں کی شہادت پر دلی رنج و غم کا اظہار کیا۔ عبدالقدوس بزنجو نے شہید رضا کاروں کے خاندانوں سے اظہار تعزیت کیا ہے۔اسسٹنٹ کمشنر سوئی عبدالحمید کورائی کے مطابق دھماکہ ڈیرہ بگٹی کی تحصیل سوئی سے 30 کلومیٹر دور ٹلی مٹ میں ہوا جس میں لیویز فورس کے اہلکاروں اور حکومتی حمایت یافتہ قبائلی امن لشکر کے رضا کاروں کو نشانہ بنایا گیا۔علاقے کے نائب تحصیلدار باہوٹ خان کے مطابق گزشتہ رات علاقے میں نامعلوم افراد نے لیویز اہلکار نواب دین کی زمینوں پر نصب ٹیوب ویل اور شمسی توانائی کے پلیٹوں کو فائرنگ کر کے نقصان پہنچایا تھا۔

سینیٹر سرفراز بگٹی نے کہا کہ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شرو ع کر دیا ہے اور لوگوں کی مدد کرنا ریاست کی ذمہ داری ہےڈیرہ بگٹی سے تعلق رکھنے والے سابق وزیر داخلہ بلوچستان سینیٹر سرفراز احمد بگٹی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا کہ سوئی کے نواحی علاقے ٹلی مٹ میں دھماکا ہوا ’4 شہدا میں سے ایک  میرا کزن سائیں بخش ہے جو چار بچوں کا باپ تھا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کالعدم تنظیم اس حملے میں ملوث ہے، ریاست کب تک معصوم لوگوں پر ایسے حملوں کو برداشت کرتی رہے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں