پاکستانی سیلاب متاثرین کے گھروں کی تعمیرمیں مدد کے لیے بھرپورکوششیں جاری رکھیں گے،چین

 بیجنگ(نیوزٹویو) چین نے اعلان کیا ہے کہ سیلاب سے متاثرہ پاکستانیوں کے گھروں کی تعمیر نو میں مدد کے لیے بھرپور کوششیں جاری رکھیں گے۔ انٹرنیشنل پریس سینٹر میں معمول کی بریفینگ کے دوران چینی دفتر خارجہ کے ترجمان وینگ وین بن نے امریکی سیکریٹری اسٹیٹ انٹونی بلنکن کے پاکستان کو سیلاب سے ہونے والی تباہی کے سبب چین سے قرضوں میں ریلیف لینے کی تجویز پرردعمل دیتے ہوئے کہا کہ جیسے ہی پاکستان میں سیلاب آیا، چین نے اپنے دوست اور بھائی پاکستان کی ضروت کے وقت فوری طور پر مدد کی۔

انہوں نے کہا کہ چین کی حکومت نے 40 کروڑ چینی یوآن کی انسانی بنیادوں پر مدد کی جبکہ چین کی سول سائٹی نے بھی امداد کی ہے۔ چین اور پاکستان کے درمیان سودمند اقتصادی اور مالی تعاون رہا ہے، پاکستانی عوام یہ بات بخوبی جانتے ہیں۔پاک-چین تعاون کے خلاف بے جا تنقید کے بجائے پاکستانی عوام کے لیے حقیقی اور فائدہ مند کام کیا جانا چاہیے۔

انسانی حقوق کونسل کے 51ویں اجلاس میں تقریباً 70 ممالک کی طرف سے مشترکہ بیان پاکستان کی جانب سے جاری کرنے سے متعلق سوال پر انہوں نے سنکیانگ، ہانگ کانگ اور تبت سے متعلق مسائل پر چین کے موقف کی حمایت کی اور کہا کہ بعض ممالک چین کے خلاف نام نہاد انسانی حقوق کے مسئلے کو استعمال کرتے ہیں لیکن وہ ہر بار ناکام رہے ہیں۔ عالمی برادری کی اکثریت کی طویل عرصے سے اس پر واضح نظریں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چین خودمختاری، قومی سلامتی اور ترقیاتی مفادات کو برقرار رکھنے کا غیر متزلزل عزم رکھتا ہے، ان کا کہنا تھا کہ تنقید سے ترقی کرنے کاسفر نہیں رکے گا۔ واضح رہے کہ امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے پاکستان سے کہا تھا کہ وہ ملک میں سیلاب سے ہونے والی تباہی کے سبب قریبی دوست ملک چین سے قرضوں میں ریلیف حاصل کرے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں