کاروباری طبقہ عوام کو ریلیف کے لیے حکومت کے ساتھ مل کر چلے،وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد(نیوزٹویو) وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آئندہ سال 26ارب ڈالر کی برآمدات متوقع ہیں عوام پر مہنگائی کے بوجھ کا احساس ہے صنعتکار اور بزنس مین عام شہریوں کو ریلیف کی فراہمی کیلئے حکومت کے ساتھ مل کر چلیں عوام کو عالمی منڈی کے اثرات سے بچانے کیلئے اقدامات جاری ہیں۔بدھ کووزیراعظم عمران خان سے معروف صنعتکاروں اور تاجروں کے وفد نے ملاقات کی، ملاقات میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی موجود تھے۔ ملاقات میں حکومت اور صنعتکاروں نے ماہانہ اجرت بڑھانے پر بھی اتفاق کیا۔صنعتکاروں اور تاجروں کے وفد سے گفتگوکرتے ہو ئے انہوں نے کہا کہ چین کے دورے سے پہلے بزنس کمیونٹی سے مشاورت ضروری تھی، میری استدعا پر ملازمین کی تنخواہیں بڑھانے والوں کے شکر گزارہیں، حکومت کو مہنگائی کی وجہ سےعوام پر بوجھ کا احساس ہے، عام آدمی کو مہنگائی کے اثرات سے بچانے کیلئے اقدامات کیے جارہے ہیں، صنعتکار اور بزنس مین عام آدمی کو ریلیف دینے کیلئے حکومت کا ساتھ دیں۔

عمران خان نےٓ کہا پارٹی منشور میں آئی ٹی اور ٹیکسٹائل برآمدات کی پالیسی شامل کی تھی، حکومت برآمدات بڑھانےکیلئے طویل المدتی پالیسی پرعملدر آمد کر رہی ہے، کمپنیوں کے منافع کے ثمرات مزدور طبقے کو ملنے چاہئیں، کاروبار دوست پالیسیوں سے انڈسٹری نے ریکارڈ منافع کمایا، آئی ٹی اورٹیکسٹائل برآمدات کی پالیسی کےثمرات مل رہے ہیں، ملک کی 10 بڑی کمپنیوں نے گزشتہ سال 929 ارب روپےمنافع کمایا۔حکومت نے سرمایہ کاری اور کاروبار کے فروغ کیلئے تاریخی اقدامات کیے، ٹیکسٹائل سیکٹر کی برآمدات 21 ارب ڈالر کی ریکارڈ سطح پر پہنچیں ، اگلےسال 26 ارب ڈالر کی برآمدات متوقع ہیں، پاکستان دنیا کا چوتھا سب سے زیادہ موٹر سائیکل بنانے والا ملک بن گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں